لین دین 10

لین دین کی وجہ سے قبضہ کے مسائل بڑھنے لگے لوگ پریشان

گزارش ہیکہ سائل 435/EBکا مستقل سکونتی ہے زمیندارہ کرتا ہوں میں مربع نمبر 48کیلہ نمبران 12.9.3.2/48میں کل 32کینال رقبہ کا مالک و قابض تھا جومیں نے 2019میں اپنے کل رقبہ 32کینال میں سے 31کینال رقبہ رائل گارڈن بوریوالہ ہاوسنگ سکیم والوں کو فروخت کر دیا جبکہ ایک کینال رقبہ جو کیلہ نمبر 2-9میں واقع ہے اب بھی میرے نام پر میرے قبضہ میں ہے جسپر میں نے رہائشی تعمیرات شروع کی ہوئی ہے مورخہ 22.01.20بوقت تقریبا3/20بجیدن میں معہ مسمیان محمد اکرم ولد محمد اسحاق قوم بھٹہ2عبداللہ ولد محبوب شاہد قوم بھٹہ سکنائے دیہہ اپنے احاطہ ملکیتی پر چکر لگانے گیا تو دیکھا کہ الزام علیہان متذکرہ بالامسلح ہائے سوٹے و کسی میرے احاطہ میں قبضہ کی کوشش کر رہے تھے اور میری اینٹیں چوری کر کے لیجارہے تھے میں نے 15پر کال کی تو ملزمان پولیس کے ڈالا کو آتا دیکھ کر موقع سے فرار ہو گئے ملزمان نے میری زمین تعمیرات پر قبضہ کی کوشش کر کے اور میری تقریبا3500/-اینٹیں پختہ مالیتی 21000/-روپے چوری کر کے سخت زیادتی کی ہے آجتک ملزمان صلح کی خاطر میری منت سماجت کرتے رہے ہیں میں نہ مانا ہوں زیادتی ہوئی ہے کاروائی کی جاوے

گزارش ہے کہ سائل چک نمبر 291 ای بی بوریوالہ کا رہائشی ہے اور فیکڑی میں بطور ملازم کام کرتا ہوں مورخہ 08.01.2020کوبوقت 12/25 بجے دن سائل نے نیشنل بینک مین برانچ بوریوالہ سے اپنی زوجہ مسماۃ عزرا پروین لیڈی ہیلتھ ورکر کی تنخواہ ATMسے مبلغ 21000/-روپے نکلوا کر بوریوالہ شہر آ گیا اور اسکے بعد HBLبرانچ نزد بھٹی پلازہ بوریوالہ سے اپنے اکاونٹ بذریعہ ATMسے رقم مبلغ 40000/-روپے نکلوا کر HBL ATMکی برانچ سے باہر آ گیا تھوڑے فاصلہ پر پہنچا تو اچانک 2نامعلوم ملزمان ایک نے نقاب پہنا ہوا تھا اور دوسرے کو سامنے آنے پر سائل شناخت کر سکتا ہے مسلح آتشیں اسلحہ آگئے اور آتے ہی موٹر سائیکل روک کر اسلحہ میری کنپٹی پر رکھ کر ملزمان نے مجھ سے رقم 61000/-روپے چھین لی اور دھکمی دی کہ اگر شور کیا تو جان سے مار دیں گے ملزمان کے جانے کے بعد سائل نے شور واویلہ کیا تو محمد طیب ولد عبدالستار قوم آرائیں سکنہ 291/EBمحمد سجاد ولد عبدالستارآرائیں سکنہ 291/EBجو کہ سودا لینے شہر آئے ہوئے تھے بھی آ گئے اسکے علاوہ دیگر مرد مان بھی موقع پر آگئے جنہوں نے بھی وقوعہ ہذا بچشم خود دیکھا ملزمان نے وقوعہ سرزد کر کے سخت زیادتی کی ہے ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر وا کر میری حق رسی کرتے ہوئے رقم برآمد کروائی جاوئے۔

گزارش ہے کہ سائل چک نمبر 463/EBبوریوالہ ضلع وہاڑی کا رہائشی ہے اور طالب علم ہے اور سائل کی ہمشیرہ مسماۃ رانیہ چوہدری دختر چوہدری محمد ارشد ذات جٹ بھٹہ بعمر 14سال نابالغہ جو کہ کلاس دہم کی طالبہ ہے جو کہ گرین ویو میں واقع ایک گھر میں اکیڈمی میں پڑھتی تھی سائل حسب معمول مورخہ 20.01.2020تقریبا 1:45pmبجے سہ پہر اپنی ہمشیرہ کو گرین ویو اکیڈمی میں چھوڑ کر چلا گیا جب سائل شام کو چار بجے ہمشیرہ ام کو لینے کے لیے گیا تو اکیڈمی والوں نے بتایا کہ آپ کی ہمشیرہ کو فون آیا تھا کہ اس کی والدہ کی طبیعت خراب ہو گئی ہے اورآپ کی ہمشیرہ سفید رنگ کی مہران سوزوکی بلا نمبری گاڑی پر بیٹھ کر چلی گئی۔ سائل اپنے طور پر ہمشیرہ ام کی تلاش کر رہا تھا کہ مل موڑ پر مسمیان محمد آصف ولد محمد وارث قوم جٹ بھٹہ و تیمور حسن ولد نصیر احمد قوم وڑائچ سکنائے چک نمبر 463/EBملاقی ہوئے جنہوں نے بتایا کہ ابھی تھوڑی دیر پہلے مندرجہ بالا الزام علیہان ایک سفید رنگ کی گاڑی بلا نمبری پر آپ کی ہمشیرہ کو زبردستی اسلحہ کے زور پر لے جارہے تھے جو ہمارے گاؤں کے رہائشی ہیں۔ ہم مندرجہ بالا کو پہچانتے ہیں جملہ الزام علیہان مندرجہ بالا نے سائل کی ہمشیرہ نا بالغہ کو برائے زناء حرام کاری اسلحہ کے زور پر دھوکہ دہی سے اغواء کر کے سخت زیادتی کی ہے۔ لہذا الزام علیہان کے خلاف مقدمہ درج کر کے سائل کی ہمشیرہ ام نا بالغہ کو بر آمد کر کے ملزمان کو گرفتار کر کے قرارواقعی سزا دی جاوے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں